بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

29 ربیع الثانی 1443ھ 05 دسمبر 2021 ء

دارالافتاء

 

اعتکاف کے دوران زینت اختیار کرنا


سوال

اعتکاف کے دوران سر کو تیل لگانا،چہرے پر کریم لگانا ،شیشہ وغیرہ دیکھنا اور کپڑے تبدیل کرنا  کیسا ہے ؟اس کی وضاحت فرما دیں۔

جواب

اعتکاف کے  دوران  مسجد کی حدود کے اندر یہ تمام امور جائز ہیں، البتہ  سر میں تیل لگانے  میں یہ خیال رہے کہ بال ٹوٹ کر مسجد میں نہ گریں، اور مسجد کی دری یا قالین وغیرہ ملوث نہ ہو۔

اسی طرح اعتکاف کی حالت میں مسجد کی حدود  کے اندر پردہ وغیرہ کرکے کپڑے تبدیل کرنے میں کوئی مضائقہ نہیں ہے، البتہ صرف کپڑے بدلنے کے لیے مسجد کی حدود سےباہر  جانا جائز نہیں ہے، اس سے اعتکاف فاسد ہوجائے گا۔

بدائع  الصنائع میں ہے:

"و روي عن عائشة - رضي الله عنها - أنها قالت: «كان رسول الله صلى الله عليه وسلم يخرج رأسه من المسجد فيغسل رأسه» وإن غسل رأسه في المسجد في إناء لا بأس به إذا لم يلوث المسجد بالماء المستعمل، فإن كان بحيث يتلوث المسجد يمنع منه؛ لأن تنظيف المسجد واجب."

(‌‌بدائع الصنائع في ترتيب الشرائع، 2/ 115،فصل : ركن الاعتكاف،ط: دار الكتب العلمية)

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144209202139

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں