بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

12 جُمادى الأولى 1444ھ 07 دسمبر 2022 ء

دارالافتاء

 

ایک آدمی کا کئی جانور قربان کرنا


سوال

الگ الگ جانور میں ایک ہی شخص کے نام سے قربانی کر سکتے ہیں کیا؟

جواب

اگر کوئی شخص  ایک جانور کے بجائے کئی جانور ذبح کر لے یا کئی جانوروں میں شریک ہو جائے تو ایسا کرنا درست ہے، ایک سے اُس کی واجب قربانی ادا ہو جائے گی اور بقیہ نفل شمار ہو گی۔

الدر المختار وحاشية ابن عابدين (رد المحتار) (6/ 333):

"قال في الخلاصة: و لو ضحى بأكثر من واحدة فالواحدة فريضة و الزيادة تطوع عند عامة العلماء. و قال بعضهم: لحم، و المختار أنه يجوز كلاهما اهـ. و في التتارخانية عن المحيط: أنه الأصح."

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144212201047

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں