بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

4 جُمادى الأولى 1444ھ 29 نومبر 2022 ء

دارالافتاء

 

اگر نہانے کے بعد شرم گاہ پر کپڑا لگ جائے تو وہ پاک ہوتا ہے


سوال

نہانے کے بعد تولیے سے جسم خشک کرکے اس سے  دوبارہ منہ صاف کیاجاسکتا ہےکیا اگر جسم کے مخصوص اعضاء  سے تولیہ ٹچ کرے اس سے  دوبارہ منہ صاف کیا جاسکتا ہے ؟

جواب

واضح رہے کہ  جنابت وغیرہ کے بعد جب کوئی مرد و عورت غسل کرلے اور جسم پر کوئی ظاہری نجاست نہ لگی ہو تو اس کا پورا بدن پاک ہوجاتا ہے، جسم یا کپڑا تب ناپاک ہوتاہے جب اس پر کوئی ناپاکی (پیشاب، پاخانہ، منی، مذی، خون وغیرہ) یقینی طور پر لگی ہو۔ صرف ستر سے چھونے سے کپڑا ناپاک نہیں ہوتا۔

لہذا صورت مسئولہ میں نہانے کے بعد جب جسم کو اچھی طرح سے پاک کر لیا جائے اور پھر شرم گاہ وغیرہ   پر وہ تولیہ یا کپڑا  لگ جائے تو وہ ناپاک نہیں ہوتا ، اس سے منہ صاف کیا جا سکتا ہے۔

مسند أحمد میں  ہے:

 "عن قيس بن طلق، عن أبيه قال: سأل رجل رسول الله صلى الله عليه وسلم أيتوضأ أحدنا إذا مس ذكره؟ قال: «إنما هو بضعة منك أو جسدك»".

(مسند أحمد ،  (26/ 214)، حديث طلق بن علي، مسند المدنيين، الناشر: مؤسسة الرسالة)

المبسوط للسرخسي:

"وکذلك إن مسّ ذکره بعد الوضوء فلاوضوء علیه، وهذا عندنا، وکذلک إذا نظر إلی فرج امرأة".

  (المبسوط للسرخسي، کتاب الصلاة، باب الوضوء والغسل، 1/183- ط: رشیدیه)

   فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144401101454

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں