بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

18 ذو الحجة 1442ھ 29 جولائی 2021 ء

دارالافتاء

 

’’عبد الھادی‘‘ نام رکھنا


سوال

 اللہ پاک نے مجھےایک پیارا سا بیٹا عطا کیا ہے،جو ۵جولائی بروز پیر کو رات ٩ بجے پیدا ہوا، جس کا نام میں (محمد عبدالھادی)  رکھنا چاہتا ہوں ،کیا میں یہ نام اپنے بیٹے کا رکھ سکتا ہوں؟

جواب

"ہادی" اللہ تعالی کے صفاتی ناموں میں سے ہے ، اس کا معنی ہے "ہدایت دینے والی ذات"،  لہذا عبد الھادی کا معنی ہوا "ہدایت دینے والی ذات کا بندہ" ، اور ناموں کے شروع میں  "محمد" کا اضافہ برکت کے لیے کیا جاتا ہے، لہذا "محمد عبد الہادی" نام رکھنا درست بھی ہے اور اچھا بھی ہے،تاہم واضح ہو کہ نام رکھنے سے پیدائش کے دن، تاریخ اور وقت  کا کوئی تعلق نہیں ہے۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144211201491

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں