بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

15 محرم 1446ھ 22 جولائی 2024 ء

دارالافتاء

 

آٹھ آدمیوں کا 2 گائے کی قربانی کرنے کا حکم


سوال

آٹھ آدمی مل کر دو بڑے جانور کو قربانی کے لئے خریدےاور پھر ان دونوں جانوروں کی قربانی کرکے پورے گوشت کو آٹھ حصوں میں تقسیم کرلیں ،کیا اس طرح قربانی کرنا درست ہے؟

جواب

صورتِ مسئولہ میں ہر ایک جانور  میں اگر چار چار افراد شریک ہوں تو قربانی درست ہوگی اور اگر دونوں جانوروں میں آٹھ آٹھ افراد شریک ہوں تو  قربانی جائز نہیں ہوگی۔

فتاوی عالم گیری میں ہے :

"وإذا كان الشركاء في البدنة أو البقرة ثمانية لم يجزهم؛ لأن نصيب أحدهم أقل من السبع."

(كتاب الأضحية،الباب الثامن،ج5،ص305،ط:دار الفكر)

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144412100334

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں