بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

11 رجب 1444ھ 03 فروری 2023 ء

دارالافتاء

 

آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے حضرت خدیجہ رضی اللہ تعالیٰ عنہا سے نکاح کی تاریح


سوال

حضور صلی اللّٰہ تعالیٰ علیہ واٰلہٖ وسلّم کا حضرت خدیجہ الکبریٰ رضی اللّٰہ عنہا  سے  نکاح کب ہوا تھا ؟یعنی تاریخِ نکاح کیا تھی؟

جواب

 حضورِ اقدس صلی اللہ علیہ وسلم  ملک شام کے دوسرے   تجارتی  سفر پر   جس وقت تشریف لے گئے، اس وقت  آپ کی  عمر مبارک 25 سال تھی، اور یہ سفر ماہ ذی الحجہ کے ختم ہونے  سے 14 دن پہلے ہوا، پھر شام کے سفر سے  واپسی کے  دو مہینہ  ، پچیس دن بعد ،  صفر كے مهينه کے بعد ،  آپ صلی اللہ علیہ وسلم کا  حضرت خدیجہ بن خویلد رضی تعالیٰ عنہ سے  نکاح  ہوا،اس حساب  سے آپ کا حضرت خدیجہ سے نکاح ربیع الاول کے مہینہ میں ہوا  ہے، لیکن ربیع الاول  کی کس تاریخ کو ہوا  ہے؟ سیرت، اور تاریخ کی دست یاب کتابوں میں ہمیں نہیں مل سکا۔

الاستيعاب في معرفة الأصحاب  میں ہے:

"وذلك سنة خمس وعشرين. وتزويج رسول الله صلى الله عليه وسلم خديجة بنت خويلد بن أسد بعد ذلك بشهرين وخمسة وعشرين يوما، في عقب صفر سنة ست وعشرين، وذلك بعد خمس وعشرين سنة وشهرين وعشرة أيام من يوم الفيل."

(1 / 35، مقدمة، ط: دارالجيل ، بيروت)

سبل الهدى والرشاد في سيرة خير العباد  ميں ہے:

"قال ابن إسحاق في المبتدأ: وكان تزويجه لها بعد مجيئه من الشام بشهرين وخمسة وعشرين يوما عقب صفر سنة ست وعشرين."

(2 / 165، الباب الرابع عشر في نكاحه صلى الله عليه وسلم خديجة...الخ، ط: دارالكتب العلمية)

تاريخ الخميس في أحوال أنفس النفيس ميں  ہے:

"وفى السنة الخامسة والعشرين من مولده صلّى الله عليه وسلم خروجه الى الشام فى المرّة الثانية  مع ميسرة عبد خديجة لاربع عشرة ليلة بقيت من ذى الحجة وتزوّجها بعد ذلك شهرين وخمسة وعشرين يوما فى عقب صفر سنة ست وعشرين."

 (1 / 261 ، الباب الثالث فى الحوادث من السنة الخامسة والعشرين، ط: دارصادر بيروت)

فقط والله أعلم


فتوی نمبر : 144403100886

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں