بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

21 ذو الحجة 1441ھ- 12 اگست 2020 ء

دارالافتاء

 

کیا غیر صاحبِ نصاب کے لیے زکاۃ لینا جائز ہے؟


سوال

ایک عورت جو کہ کچھ بھی زیورات نہیں رکھتی سونے کے اور کوئی بچت بھی نہیں ہےاور شوہر خرچہ بھی پورا نہیں دیتا اور آئے روز طلاق کی دھمکی دیتا ہے اور میکے سے کوئی سہارا نہیں, دس سال کی عمر سے کم عمر کے تین بچے ہیں تو زکات لے سکتی ہے؟

جواب

اگر واقعۃً  مذکورہ عورت کے یہی احوال ہیں جو سوال میں درج کیے گئے ہیں تو ان احوال میں اسے زکاۃ دینا جائز ہے، زکاۃ دینے والوں کی زکاۃ ادا ہوجائے گی، اور وہ اپنی ضروریات پوری کرنے کے لیے زکاۃ لے سکتی ہے۔ فقط واللہ اعلم

نوٹ: یہ مسئلے کا شرعی حکم ہے، کسی خاص فرد کی تصدیق نہیں ہے۔


فتوی نمبر : 144108200351

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں