بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

24 جمادى الاخرى 1441ھ- 19 فروری 2020 ء

دارالافتاء

 

کیا مہر معاف کرنے سے معاف ہوجاتا ہے؟


سوال

حقِ مہر معاف ہوسکتا ہے، اگر بیوی حقِ مہر معاف کرنا چاہے تو  کیا وہ معاف ہو جائے گا؟

جواب

مہر عورت کا حق اور شوہر کے ذمہ واجب الادا  قرض ہے، لہٰذا جس طرح دیگر قرضے معاف کرنے سے معاف ہوجاتے ہیں، اسی طرح اگر عورت کسی بھی قسم کے جبر و اکراہ کے بغیر اپنی خوش دلی سے اپنا پورا  مہر یا مہر کا کچھ حصہ معاف کر دے تو وہ مہر معاف ہو جاتا ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144104200988

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے