بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

14 ذو القعدة 1441ھ- 06 جولائی 2020 ء

دارالافتاء

 

کمپنی کی تشہیر کے لیے جمعہ مبارک کی پوسٹ بنانا


سوال

 جمعہ کی مبارک باد دینے کا کیا حکم ہے؟ اور اگر کوئی شخص جمعہ کی مبارک باد  کی پوسٹ بنائے؛ تا کہ مبارک باد بھی دے دے اور اپنی کمپنی کی شہرت بھی ہو جائے،تو اس صورت میں کیا حکم ہوگا؟

جواب

جمعہ کی مبارک باد کا مطلب جمعہ کے بابرکت ہو نے کی دعا دینا ہے، اور برکت والے دن برکت کی دعا دینے میں  بذاتِ خود حرج نہیں ہے، البتہ اس طرح مبارک باد دینے کا التزام واہتمام کرنا  اور اس کو دین کا حصہ سمجھنا اور مبارک باد نہ دینے والے کو برا سمجھنا اور کہنا جائز نہیں۔ جہاں اس کے التزام کا اندیشہ ہو تو وہاں اس کی مستقل عادت نہ بنائی جائے۔

 جمعہ کی مبارک باد دینا چوں کہ برکت کی دعا دینا ہے، لہذا اس میں اخلاص ضروری ہے، کمپنی کی تشہیر کی نیت سے جمعہ مبارک کی پوسٹ بنانا اخلاص اور دینی آداب کے منافی ہے، لہذا  اس سے اجتناب کیا جائے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144103200044

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں