بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 12 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

پینٹ شرٹ پہننا / ہاف آستین میں نماز


سوال

کیا پینٹ  پہنناجائز  ہے؟ اور ہاف شرٹ میں نماز ہو  جاتی ہے؟

جواب

1۔۔  پینٹ شرٹ چست یا باریک نہ ہو تب بھی اس کا پہننا صلحاء کا لباس نہ  ہونے کی بنا پر  مکروہ ہے، اس لیے مسلمانوں کو  چاہیے کہ  صالحین ، دین دار، اور نیکوکاروں کے لباس کو اختیار کریں اور فساق وفجار اور کفار کے  لباس اور طور طریق سے حتی المقدور پرہیز کریں۔ تفصیل کے لیے درج ذیل لنک پر مضمون ملاحظہ فرمائیں:

لباس کے شرعی وطبعی تقاضے اور تشبہ کا المیہ!

2۔۔ آدھی (ہالف) آستین والی قمیص یا شرٹ میں نماز پڑھنا مکروہ ہے، اس حالت میں نماز ادا کی تو کراہت کے ساتھ ادا ہوجائے گی، اس لیے محض اس وجہ سے نماز قضا کردینا درست نہیں کہ اس وقت ہاف آستین کاکپڑا پہنے ہوئے ہے۔

الدر المختار وحاشية ابن عابدين (رد المحتار) (1/ 640):

"(و) كره (كفه) أي رفعه ولو لتراب كمشمر كمّ أو ذيل.

 (قوله: كمشمر كمّ أو ذيل) أي كما لو دخل في الصلاة وهو مشمر كمه أو ذيله". فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144004201505

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے