بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

4 شوال 1441ھ- 27 مئی 2020 ء

دارالافتاء

 

پاک وہند سے حج وعمرے کے لیے جانے والوں کا میقات


سوال

پاک وہند سے حج وعمرہ کی نیت سے جانے والوں کے لیے میقات کی تفصیل بتائیے؟

جواب

پاکستان اور ہندوستان سے بذریعہ بحری راستہ حج وعمرہ کے لیے جانے والوں کا میقات تو ’’یلملم‘‘ ہی ہے۔ البتہ ہوائی سفر کے دوران پاکستان سے سعودی عرب جانے والا جہاز عموماً ’’قرن المنازل‘‘  کی میقات یا اس کی محاذات سے گزر کر جدہ پہنچتا ہے؛ اس لیے جو پاکستانی حج یا عمرے کے لیے براستہ جدہ جارہاہو تو اس کے لیے اس مقام سے گزرنے سے پہلے احرام باندھنا ضروری ہوگا۔ البتہ اگر وہ پاکستان سے براہِ راست مدینہ جائے تو اس کے لیے مدینہ سے مکہ مکرمہ جاتے ہوئے میقات ’’ذوالحلیفہ‘‘ (بیرعلی) یعنی اہلِ مدینہ کا میقات ہوگا۔ 

باقی ہندوستانی ہوائی جہاز کون سا راستہ اختیار کرتے ہیں، یہ ہمارے علم میں نہیں، اگر وہ سمندر کے اوپر سے سفر کرتے ہوئے، یمن (خلیج عدن) سے گزر کر، بحر احمر سے ہوتے ہوئے جدہ جاتے ہیں تو ہندوستانی زائرین کے لیے میقات ’’یلملم‘‘  ہوگا۔ اور اگر ہندوستانی جہاز  خلیجِ عمان سے ہوکر دبئی سے گزرکر یا خلیجِ فارس سے ہوکر بحرین سے گزر کر پھر ریاض سے ہوتاہوا جدہ جاتاہے تو ان کا میقات بھی ’’قرن المنازل‘‘ اور اس کی محاذات ہوگا۔ 

"ميقات أهل اليمن وتهامة والهند: يلملم: جبل جنوبي مكة على مرحلتين منها". (الفقه الإسلامي وأدلته: ٣/ ٢١٢٩)فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144104200459

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے