بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

10 ربیع الثانی 1441ھ- 08 دسمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

نکاح کے گواہوں سے گواہی کہلوانا


سوال

نکاح میں دلہن اور دولہا نے زبانی ایجاب و قبول کے بعد دولہا نے خود اپنے دو گواہوں سے پوچھا : جی گواہان!،تو دونوں گواہوں نے بولا : جی ہم کافی ہیں، ہم آپ کے گواہ ہیں، تو دولہا کے ایجاب و قبول کے بعد ایسا پوچھنے سے نکاح میں کوئی خرابی تو نہیں آجاتی؟

جواب

نکاح کی مجلس میں گواہوں کا ایجاب و قبول کو سن لینا کافی ہے، اس کے لیے زبان سے گواہ بن جانے کا اعتراف کرنے کی ضرورت نہیں، تاہم اگر ایسا کرلیا گیا ہے تو اس سے نکاح پر اثر نہیں پڑا۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909200529

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے