بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

6 شوال 1441ھ- 29 مئی 2020 ء

دارالافتاء

 

نماز میں سجدہ کی حالت میں اضافی دعائیں پڑھنے کا حکم


سوال

نماز میں سجدہ میں دعاوں کا اضافہ کیا جا سکتا ہے؟ یہ صرف سجدہ میں پڑھے جانے والے کلمات ہی پڑھے جا سکتے ہیں؟

جواب

امام کو چاہیے کہ مقتدیوں کی رعایت رکھتے ہوئے فرض نماز کے رکوع اور سجدہ میں صرف مسنون تسبیحات  پر ہی اکتفا کرے،  ہاں اگر مقتدیوں کی چاہت ہو کہ رکوع اور سجدے طویل ہوں یا کسی شرعی عذر کی وجہ سے یا نماز قضا ہوجانے کی وجہ سے انفرادی طور پر فرض نماز ادا کررہاہو تو  ماثور دعائیں پڑھنے  یا عربی میں دعا مانگنے کی اجازت ہے۔ 

باقی نوافل کے سجدے میں تسبیحات کے ساتھ ماثور دعائیں مانگنا بہتر ہے، اسی طرح عربی زبان میں دیگر ایسی دعائیں بھی مانگ سکتے ہیں جو ایسے امور سے متعلق ہوں جو مخلوق سے نہ مانگے جاسکتے ہوں۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144106201084

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے