بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 20 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

نفع والا خریدار ملنے سے پہلے کرائے پر دینے کی نیت سے خریدے گئے مکان پر زکاۃ کاحکم


سوال

ایک مکان لیا تھا اس نیت سے کہ اس کو فی الحال کرائے پہ دے دیں گے، پھر جب موڈ ہوا اچھی پارٹی لگے گی تو فروخت کردیں گے۔  کیا اب اس گھر کی مالیت پر زکات دینی ہوگی؟

جواب

صورتِ مسئولہ میں مذکورہ مکان بمنزلہ سامانِ تجارت کے ہے؛ اس لیے کہ خریدتے وقت ہی یہ نیت ہے کہ اچھا خریدار ملنے کی صورت میں اسے نفع پر بیچا جائے گا، خواہ فی الحال اسے کرایہ پر دیا جارہاہو، لہٰذا  اس کی مالیت پر زکاۃ واجب ہوگی۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008201055

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے