بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

30 جُمادى الأولى 1441ھ- 26 جنوری 2020 ء

دارالافتاء

 

نعت کے ساتھ دف بجانا


سوال

دف کےساتھ نعتِ پاک پڑھناکیساہے؟

جواب

ایسی نعتیں پڑھنا اور سننا جن میں شرکیہ الفاظ نہ ہوں کارِثواب ہے، نبی کریم ﷺکا ذکر کسی بھی عنوان سے ہو اس کے عبادت ہونے میں کوئی شک نہیں۔ البتہ  دف کے ساتھ حمد ونعت پڑھنا انتہائی گناہ ہے، اور ایسی نعتیں سننا بھی جائز نہیں۔

فقہاءِ کرام نے لکھا ہے کہ جو شخص قرآن کریم کو دف یا بانسری کے ساتھ پڑھتا ہے وہ مسلمان نہیں رہتا، نیز ملاعلی قاری رحمہ اللہ نے لکھا ہے کہ اسی (کفر کے )حکم کے قریب ہے اللہ کے ذکر اور نبی کریم ﷺکی نعت کے ساتھ دف یابانسری بجانا۔چنانچہ شرح ملا علی القاری علی الفقہ الاکبر میں ہے :

"وفي الخلاصة: من قرأ القرآن علی ضرب الدف والقضیب یکفر، قلت: ویقرب منه ضرب الدف والقضیب مع ذکر الله تعالیٰ ونعت المصطفی ﷺ، وکذا التصفیق علی الذکر".(فصل فیما یتعلق بالقرآن والصلاة، ص:167، قدیمي کتب خانه کراچی) فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144103200517

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے