بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 11 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

نشہ کی حالت میں یہ کہنے والے میں اللہ پر یقین نہیں رکھتا شخص کا حکم


سوال

اگر کسی شادی شدہ شخص نے نشہ کی حالت میں یہ کہا : ’’میں اللہ پر یقین نہیں رکھتا، خدا میری مدد ہی نہیں کرتا‘‘۔ کیا وہ شخص مسلمان باقی رہا؟  یا تجدید ایمان کرنا ہوگا؟ کیا اس کا نکاح برقرار ہے جب کہ اس کے دو بچے بھی ہیں؟

جواب

صورتِ مسئولہ میں نشہ کی حالت میں مذکورہ الفاظ کہنے کی وجہ سے مذکورہ شخص دائرہ اسلام سے خارج ہوگیا ہے، اسے فوری طور پر سچے دل سے بارگاہِ الہی میں ندامت اور شرمندگی کے احساس کے ساتھ توبہ کرتے ہوئے تجدیدِ ایمان و تجدیدِ نکاح کرنا ضروری ہوگا، اور آئندہ نشہ نہ کرنے کا عزم کرتے ہوئے اس قبیح عمل سے توبہ بھی ضروری ہے، تجدیدِ ایمان و تجدیدِ نکاح کے بغیر مذکورہ شخص کی بیوی اس کے لیے حلال نہیں ہوگی۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008200322

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے