بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

27 جُمادى الأولى 1441ھ- 23 جنوری 2020 ء

دارالافتاء

 

میت کےاستعمال شدہ کپڑوں اور جوتے وغیرہ کاکیا حکم ھے؟


سوال

میت کے استعمال شدہ کپڑوں اور جوتے وغیرہ کاکیا حکم ہے؟

جواب

انتقال کے وقت میت کی ملکیت میں جو کچھ تھا وہ سب اس کا ترکہ ہے، جسے ورثاء میں تقسیم کیا جائے گا، البتہ تمام عاقل بالغ ورثاء باہمی رضامندی سے مستحقین میں صدقہ کرنا چاہیں تو یہ بھی جائز ہے،  لیکن ورثاء میں کچھ افراد نابالغ ہوں تو اسے صدقہ کرنا جائز نہیں ہوگا۔ اسی طرح اگر ورثہ سب بالغ ہوں اور میت کی استعمال شدہ اشیاء کو باہمی رضامندی وطیبِ نفس کے ساتھ  تقسیم کرلیں اس کی بھی اجازت ہے۔ فقط واللہ اعلم 


فتوی نمبر : 144104200274

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے