بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 17 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

منی سے باہر دم شکر ادا کرنے والے کا حکم


سوال

1-ایک شخص نے منی سے باہر قربانی کی تو اس کا کیا حکم ہے؟

 2-اگر اس پر دم واجب ہے اور وہ حج سے واپس آگیا ہے تو دم اپنے ملک میں ادا کرے یا حدودِ حرم یا منی میں کسی کو پیسہ دے کر دم ادا کرے؟

جواب

1۔2۔ حجِ قران (حج وعمرہ دونوں کی اکٹھے نیت کرنا)اور حج تمتع(عمرہ کرکے پھر حج کی نیت )کرنے والے کے لیے  ایامِ نحر  (10،11،12 ذوالحجہ) میں  حلق (سرمنڈوانے) یا بال کٹوانے سے پہلے منیٰ یا حدود حرم میں یہ قربانی(دم شکرادا) کرنا واجب ہے، لہذا اگر کسی شخص نے منیٰ میں قربانی نہیں کی لیکن حدودِ حرم کے اندر قربانی کی تو دمِ شکر کی قربانی ادا ہوجائے گی۔ لیکن اگر کسی شخص نے حدودِ حرم میں قربانی نہ کی اور حلق کرواکر احرام کھول دیااور اپنے ملک واپس آگیا اب ایسے شخص پر تین دم لازم ہوں گے، ایک دمِ شکر، اور دو دم جنایت، ایک دم اس لیے کہ اس شخص نے حدودِ حرم میں قربانی میں تاخیر کردی اور دوسرا دم اس بنا پر کہ حدودِ حرم میں قربانی سے قبل اس شخص نے حلق کروادیا۔اب یہ تینوں دم حدودِ حرم میں ذبح کروانے لازم ہیں، چاہے خود اس کا انتظام کرے یاوہاں کسی کو اپنا وکیل بنادے دونوں صورتیں جائز ہیں، اپنے ملک میں ادا کرنے سے دم ادا نہیں ہوگا۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143906200032

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے