بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

29 محرم 1442ھ- 18 ستمبر 2020 ء

دارالافتاء

 

ماہواری روکنے کی گولیاں کھا کر روزے رکھنا


سوال

کوئی عورت رمضان میں حیض کے ایام سے بچنے کے لیے گولیاں کھا سکتی ہے کہ نہیں تاکہ اپنے روزے مکمل کرے؟

جواب

اگر ماہواری روکنے کے لیے گولیاں کھائیں اور خون رک گیا تو روزہ رکھنا جائز ہوگا،روزہ ادا ہوجائے گا، البتہ گولیاں کھا کر خون روکنا اور روزہ رکھنا ایک قسم کاتکلف ہے، نیز طبی لحاظ سے بھی عورتوں کے لیے نقصان دہ ہے، اس سے بسا اوقات ایام میں بے قاعدگی ہوجاتی ہے، جب کہ شریعت نے اس غیر اختیاری عذر میں عورت کو سہولت دی ہے کہ ان ایام میں روزہ نہ رکھے، پاکی کے ایام میں ان کی قضا کرے، اور اس طرح کرنے سے عورت کے اجر میں کوئی کمی نہیں ہوتی ؛ لہٰذا ایسی مشقت اٹھانے اور تکلف کی ضرورت نہیں ہے، عورت کو چاہیے کہ رمضان میں مخصوص ایام کے دوران روزے چھوڑدے اور پاکی کے دنوں میں ان روزوں کی قضا کرلے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909200026

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں