بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

11 ربیع الاول 1442ھ- 29 اکتوبر 2020 ء

دارالافتاء

 

مطلقہ دوسری جگہ نکاح کرلے تو بیٹی کی پرورش کا حق کس کو ہوگا؟


سوال

اگر طلاق یافتہ عورت دوبارہ نکاح کرلیتی ہے تو بیٹی کس کی تحویل میں رہے گی؟

جواب

پرورش کنندہ ماں ہو یا اس کی کوئی عزیزہ یاکوئی مرد ہو، لازم ہے کہ وہ بچے کے غیر ذی رحم محرم سے نکاح نہ کرلے یا ایسے شخص کے نکاح میں نہ ہو۔ ورنہ پرورش کا حق نانی اور پھر  پرنانی کا ہے۔ پھر دادی اور پھر پردادی کا ہے۔

لہٰذا اگر طلاق یافتہ عورت نے بیٹی کے کسی غیر ذی رحم محرم رشتہ دار سے نکاح کیا ہے تو اس بچی کی پرورش کا استحقاق مذکورہ ترتیب کے مطابق ہوگا۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144104200095

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں