بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

21 ذو القعدة 1441ھ- 13 جولائی 2020 ء

دارالافتاء

 

لنڈے کے جیکٹ کو امپورٹڈ کہہ کر بیچنا


سوال

ایک آدمی لنڈے سے اچھی کنڈیشن کے کپڑے مثلاً: گرم سویٹر خریدتا ہے اور اسے خوب صورت انداز میں اچھی مارکیٹ میں امپورٹڈ کہہ کر بیچتا ہے جب کہ وہ واقعی امپورٹڈ ہے اور نئے پرانے کی کوئی بات نہیں کرتا، کیا اس طرح کی فروخت جائز ہے؟

جواب

صورتِ مسئولہ میں لنڈے کے پرانے کپڑے/ لباس  (سویٹر، جیکٹ وغیرہ) کو اگر  نیا کہہ کر نہ بیچا جائے، بلکہ صرف امپورٹڈ کہا جائے اور وہ واقعۃً امپوڑٹڈ  ہو تو اس طرح خریدوفروخت کرنا جائز ہے۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144104200515

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں