بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

12 ربیع الاول 1442ھ- 30 اکتوبر 2020 ء

دارالافتاء

 

لائٹ یا بتی جلانے اور  بجھانے کی  دعا


سوال

لائٹ یا بتی جلانے اور  بجھانے کی  دعا کیا ہے؟

جواب

لائٹ جلانے اور بجھانے سے متعلق احادیث میں کوئی صریح دعا نہیں ملی۔  البتہ روایات سے معلوم ہوتا ہے کہ ہر اہم کام سے پہلے ’’بسم اللہ‘‘  پڑھنا یا اللہ پاک کے نام کا ذکرکرنا  باعثِ برکت ہے؛ اس لیے بہتر ہے کہ لائٹ جلانے اور بجھانے سے پہلے بھی ’’بسم اللہ‘‘  پڑھ لی جائے۔

نیز احادیث میں آتا ہے کہ رات کو سوتے وقت دروازے بند کر دیا کرو اور برتن ڈھانک دیا کرو اور اس موقع پر اللہ کا نام لینے کا حکم دیا گیا ہے، لہذا لائٹ جلانے اور بجھاتے وقت بھی اللہ کا نام لینا بہتر ہو گا۔

مشكاة المصابيح (2/ 1237):
"عن جابر قال: قال رسول الله صلى الله عليه وسلم: «إذا كان جنح الليل أو أمسيتم فكفوا صبيانكم؛ فإن الشيطان ينتشر حينئذٍ، فإذا ذهب ساعة من الليل فخلوهم وأغلقوا الأبواب واذكروا اسم الله؛ فإن الشيطان لايفتح بابًا مغلقًا، وأوكوا قربكم واذكروا اسم الله، وخمروا آنيتكم واذكروا اسم الله، ولو أن تعرضوا عليه شيئًا، وأطفئوا مصابيحكم»".

كنز العمال (1/ 555):
"الفصل الثاني في فضائل السور والآيات والبسملة
2490 - "بسم الله الرحمن الرحيم مفتاح كل كتاب". (خط في الجامع عن أبي جعفر معضلاً).
2491 - "كل أمر ذي بال لايبدأ فيه ببسم الله الرحيم أقطع". (عبد القادر الرهاوي في الأربعين عن أبي هريرة)".

سنن الدارقطني (1/ 229):
" عن أبي هريرة قال: قال رسول الله صلى الله عليه و سلم: كل أمر ذي بال لايبدأ فيه بذكر الله أقطع".

أدب الإملاء والاستملاء (ص: 60):
"قال رسول الله صلى الله عليه وسلم: كل أمر ذي بال لايبدأ فيه بسم الله الرحمن الرحيم أقطع".
 فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144104200520

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں