بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 21 ستمبر 2020 ء

دارالافتاء

 

قسطوں کی ادائیگی کے وقت سے پہلے تمام قیمت چکانا


سوال

میں نے اپنے ایک دوست سے قسطوں پر کار، رکشا اور دیگر چیزیں خریدی ہیں، جن کی قسطیں ایک سال سے  میں وقت پر دیتے آرہا ہوں،  مگر اب کچھ  نقصان کی وجہ سے اب میں یہ کام بند کرنا چاہتا ہوں،  اور اس کی رقم واپس کرنا چاہتا ہوں،  میری قسطوں کا وقت ابھی باقی ہے، اور اس کی طرف سے کوئی مطالبہ بھی نہیں ہے، میں خود وقت سے پہلے ادا کرنا چاہ رہا ہوں، اس کا شرعی طریقہ کیا ہوگا؟

جواب

صورتِ مسئولہ میں اگر آپ وقت سے پہلے قسطیں ادا کرنا چاہتے ہیں، تو ایسا کر سکتے ہیں، شرعا کوئی ممانعت نہیں، البتہ جتنی قیمت عقد کے وقت طے ہوئی تھی وہ مکمل ادا کرنی ہوگی، جلدی ادا کرنے کی وجہ سے قیمت میں کمی کے مطالبے کا آپ کو حق نہیں ہوگا۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144104200744

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں