بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 25 مئی 2020 ء

دارالافتاء

 

فون پر کیے ہوئے نکاح کے بعد خلوتِ صحیحہ


سوال

کیا دو گواہ کی موجودگی میں فون پر نکاح کیا جا سکتا ہے بغیر کسی وکیل کے؟ اگر کوئی  ایسا کرے اور اس کے بعد خلوتِ صحیحہ ہوجائے تو ایسے میں کیا کفارہ ادا کیا جائے؟

جواب

واضح رہے کہ وکیل بنائے بغیر فون پر کیا ہوا نکاح درست ہی نہیں ہوتا،  وہ عورت اجنبی ہوتی ہے، اس کے ساتھ خلوت میں ملنا  جائز نہیں، لہذا اگر خلوتِ صحیحہ ہو جائے تو اس پر توبہ و استغفار کرنالازم ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144102200257

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے