بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

7 شوال 1441ھ- 30 مئی 2020 ء

دارالافتاء

 

غیرمحرم کے ساتھ عمرے کا سفر کرنا


سوال

کیا میرے ساتھ عمرہ پر میری خالہ کی بیٹی جو کہ شادی شدہ ہے اور چچا کی بیٹی جو کہ غیر شادی شدہ ہے،یہ دونوں میرے ساتھ عمرہ پر جاسکتی ہیں۔جب کہ میرے ساتھ میری والدہ ،اہلیہ، چچی اور خالہ بھی جا رہی ہیں،وہ لڑکیاں اسی چچی اور خالہ کی بیٹیاں ہیں؟

جواب

آپ کی والدہ اور خالہ آپ کے لیے محارم میں سے ہیں، ان کاآپ کے ساتھ عمرے کے  سفر پر جانا  درست ہے، جب کہ چچی، خالہ کی بیٹیاں  اور چچی کی بیٹیاں آپ کے لیے اجنبی ہیں ،ان کاآپ کے ساتھ عمرہ کا سفرکرنا درست نہیں ہے،جب تک کہ ان کے ساتھ ان کے محارم میں سے کوئی شخص نہ ہو۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144004200574

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے