بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

12 ذو القعدة 1441ھ- 04 جولائی 2020 ء

دارالافتاء

 

عورت کے رحم میں دوائی رکھوانے سے غسل کا حکم


سوال

عورت اگر رحم میں دوائی رکھوائے، یعنی لیڈی ڈاکٹر اندر ہاتھ ڈال کر رکھے تو کیا غسل واجب ہو گا یا نہیں؟

جواب

مذکورہ صورت میں اگر انزال نہ ہو، اور شہوت بھی نہ ہو تو غسل واجب نہیں ہوگا۔ اگر انزال ہوگیا (منی خارج ہوگئی) تو غسل واجب ہوجائے گا۔ اگر انزال نہیں ہوا، صرف شہوت ہوئی تو احتیاطاً غسل کرنا چاہیے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144001200550

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں