بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

6 شعبان 1441ھ- 31 مارچ 2020 ء

دارالافتاء

 

عقیقہ کے گوشت کا حکم


سوال

عقیقے کا گوشت سارا کا سارا خود کھا سکتے ہیں؟

جواب

عقیقہ کے گوشت کا وہی حکم ہے جو قربانی کے گوشت کا ہے، یعنی سارا کا سارا خود بھی کھا سکتے ہیں اور سارا گوشت کسی اور کو بھی دے سکتے ہیں، اولیٰ یہ ہے کہ قربانی کے گوشت کی طرح اسے تین حصوں میں تقسیم کرکے ایک حصہ غرباء میں اور ایک حصہ رشتہ داروں میں تقسیم کرکے ایک حصہ اپنے استعمال میں لائیں۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144104200506

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے