بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

10 ذو القعدة 1441ھ- 02 جولائی 2020 ء

دارالافتاء

 

شوہر، بیوی کو مرنے کے بعد غسل نہیں دے سکتا


سوال

کیا شوہر بیوی کو غسل دے سکتا ہے؟

جواب

اگر آپ کے سوال کا مقصد یہ ہے کہ بیوی کے مرنے کے بعد شوہر اسے غسل دے سکتا ہے تو اس کا حکم یہ ہے کہ شوہر ، بیوی کو غسل نہیں دے سکتا، نہ ہی چھو سکتا ہے،  البتہ دیکھ سکتا ہے۔ اور اگر سوال کا مقصد یہ ہے کہ شوہر بیوی کو زندگی کی حالت میں غسل دے سکتا ہے تو یہ جائز ہے۔

في الدر:

"(ويمنع زوجها من غسلها ومسها لا من النظر إليها على الأصح) منية. 
وقالت الأئمة الثلاثة: يجوز لأن عليًا غسل فاطمة - رضي الله عنها -.
قلنا: هذا محمول على بقاء الزوجية لقوله عليه الصلاة والسلام: «كل سبب ونسب ينقطع بالموت إلا سببي ونسبي» مع أن بعض الصحابة أنكر عليه، شرح المجمع للعيني". (الدر مع الرد: ٢/ ١٩٨) فقط والله أعلم


فتوی نمبر : 144106201065

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں