بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 17 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

شادی بیاہ کی مخلوط محافل میں شرکت کرنا


سوال

شادی ولیمہ یا اس طرح کی دوسری محافل جس میں مخلوط انتظام کیا گیا ہو تو کیا حکم ہے اس میں جانے کا ?اگر با پردہ خواتین کے لیے ایک ٹیبل الگ لگوادی جاۓ پردے کے ساتھ تو پھر گنجائش ہے ?نہ جانے میں قطع تعلق کے زمرے میں تو نہیں آئے گی یہ بات ?کیا ہم اپنی فیملی کے ساتھ ریسٹورینٹ وغیرہ کھانا کھانے کے لیے جا سکتے ہیں ?

جواب

مسلمانوں کے لیے مخلوط محافل منعقد کرنا درست نہیں اور نہ ہی ایسی محافل میں شرکت جائز ہے، البتہ عورتیں بھی باپردہ ہوں اور ان کے لیے الگ سے پردے کے ساتھ ٹیبل کاانتظام کیاجائے اور کوئی شرعی منکر نہ ہو توشرکت کی اجازت ہے۔

عموماً ریسٹورنٹ میں پردے کاانتظام نہیں ہوتا، جہاں فیملی ہال الگ ہو وہاں بھی عموماً ہر فیملی کے لیے الگ باپردہ انتظام نہیں ہوتا،  تاہم اگر کسی ریسٹورنٹ میں مکمل باپردہ انتظام ہو تو ایسے ریسٹورنٹ میں کھانے کی گنجائش ہوگی، لیکن خواتین کو گھروں سے باہر صرف کھانے کے لیے جانا شرعاً پسندیدہ نہیں ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909201606

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے