بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

12 ذو القعدة 1441ھ- 04 جولائی 2020 ء

دارالافتاء

 

سود کا کام کرنے والے سے میل ملاپ رکھنا


سوال

 سود کا کام کرنے والے کے ساتھ میل ملاپ رکھ سکتے ہیں یا نہیں؟

جواب

جو شخص سود کے کام میں ملوث ہو اس کی اصلاح کے لیے اس نیت سے اس سے میل ملاپ رکھا جا سکتا ہے کہ موقع ملنے پر اس کو اچھے طریقے سے سمجھایا جا سکے،  نیز اس کے لیے دعا بھی کی جائے، اور اگر اس سے اس نیت سے قطع تعلقی کی جائے کہ وہ سود کے کام کو چھوڑ دے  تو ایسا کرنے سے قطع تعلقی کا گناہ بھی نہیں ہو گا۔ تاہم اگر اس کی آمدن کل یا اکثر سودی ہو تو تعلق رکھنے کی صورت میں بھی اس کی آمدن سے کھانا، پینا یا ہدیہ قبول کرنا جائز نہیں ہوگا۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144104200765

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں