بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

13 صفر 1442ھ- 01 اکتوبر 2020 ء

دارالافتاء

 

سوتیلی ماں کے بھائی سے نکاح کرنا


سوال

عبداللہ نے ایک عورت سے شادی کی اس سے ایک لڑکی (ثناء) پیدا ہوئی اور بعد میں وہ عورت فوت ہوگئی, پھر عبداللہ نے دوسری شادی کی اور اس سے بھی بچے پیدا ہوئے,  اب سوال یہ ہے کہ عبداللہ کا جو  نسبتی بھائی (یعنی دوسری بیوی کا بھائی)  ہے اس سے ثناء کا نکاح جائز ہے یا نہیں?

جواب

صورتِ مسئولہ میں  دوسری بیوی سے عبد اللہ کا برادرِ نسبتی، ثناء  کی سوتیلی ماں کا بھائی ہے اور اس بھائی سے ثناء کا محرمیت کا کوئی رشتہ نہیں ہے؛ اس لیے ثناء کی شادی اس کی سوتیلی ماں کے بھائی سے درست ہو گی۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144105200289

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں