بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 22 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

سفر شرعی کے لیے عورت کے ساتھ محرم کا ہونا ضروری ہے


سوال

ایک عورت جس کی عمر 50 سال سے زیادہ ہے وہ حج یا عمرہ کے سفر پر بغیر محرم کے جا سکتی ہے؟  نیز  کم عمر والی عورت کا حکم بھی بتا دیں!

جواب

بالغہ عورت (خواہ وہ جوان ہو یا بوڑھی) کے لیے سفر شرعی کی مسافت سے تجاوز کرنے کے لیے محرم کا ساتھ ہونا شرعاً ضروری ہے، محرم کے بغیر سفر کرنے کی صورت میں وہ گناہ گار ہوتی ہے، لہذا صورتِ مسئولہ میں مذکورہ  دونوں قسم کی خواتین کے لیے محرم کے بغیر عمرہ کے لیے سفر کرنے کی اجازت نہیں، اگر وہ چلی گئیں  تو گناہ گار ہوں  گی جس پر سچے دل سے انہیں توبہ کرنا ضروری ہوگا۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008200253

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے