بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

11 شعبان 1441ھ- 05 اپریل 2020 ء

دارالافتاء

 

رکوع سے اٹھ کر کیا امام ربنا لک الحمد کہے گا؟


سوال

 امام نماز میں  "ربنا لك الحمد"  پڑھے گا یا نہیں؟

جواب

رکوع سے اٹھتے وقت امام کا وظیفہ ’’سمع الله لمن حمده‘‘  کہنا ہے، جب کہ مقتدی کا وظیفہ ’’ربنا لك الحمد‘‘  کہنا ہے، اور اکیلے نماز ادا کرنے والے شخص کا وظیفہ تسمیع و تحمید دونوں کا جمع کرنا ہے، تاہم اگر امام قومہ میں تحمید کے الفاظ  کہہ دے تو اس صورت میں نماز پر اثر نہیں ہوگا، نماز ہوجائے گی۔

فتاوی ہندیہ میں ہے:

"فَإِنْ كَانَ إمَامًا يَقُولُ: سَمِعَ اللَّهُ لِمَنْ حَمِدَهُ بِالْإِجْمَاعِ، وَإِنْ كَانَ مُقْتَدِيًا يَأْتِي بِالتَّحْمِيدِ وَلَايَأْتِي بِالتَّسْمِيعِ بِلَا خِلَافٍ، وَإِنْ كَانَ مُنْفَرِدًا الْأَصَحُّ أَنَّهُ يَأْتِي بِهِمَا، كَذَا فِي الْمُحِيطِ. وَعَلَيْهِ الِاعْتِمَادُ، كَذَا فِي التَّتَارْخَانِيَّة. وَهُوَ الْأَصَحُّ، هَكَذَا فِي الْهِدَايَةِ. ثُمَّ فِي الرِّوَايَةِ الَّتِي تَجْمَعُ يَأْتِي بِالتَّسْمِيعِ حَالَ الِارْتِفَاعِ وَإِذَا اسْتَوَى قَائِمًا قَالَ: "رَبَّنَا لَكَ الْحَمْدُ"، كَذَا فِي الزَّاهِدِيِّ. وَهُوَ الصَّحِيحُ، كَذَا فِي الْقُنْيَةِ. سُئِلَ يُوسُفُ بْنُ مُحَمَّدٍ عَمَّنْ رَفَعَ رَأْسَهُ مِنْ الرُّكُوعِ وَلَمْ يَقُلْ عِنْدَ الرَّفْعِ "سَمِعَ اللَّهُ لِمَنْ حَمِدَهُ" قَالَ: لَا يَأْتِي بِهِ بَعْدَمَا اسْتَوَى قَائِمًا، وَكَذَا كُلُّ ذِكْرٍ يُؤْتَى بِهِ فِي حَالِ الِانْتِقَالِ لَايُؤْتَى بِهِ فِي غَيْرِ مَحِلِّهِ كَالتَّكْبِيرِ الَّذِي يُؤْتَى بِهِ عِنْدَ الِانْحِطَاطِ مِنْ الْقِيَامِ إلَى الرُّكُوعِ أَوْ مِنْ الرُّكُوعِ إلَى السُّجُودِ، وَكَذَا لَا يَأْتِي بِبَقِيَّةِ تَسْبِيحَةِ السُّجُودِ بَعْدَ رَفْعِ رَأْسِهِ بَلْ الْوَاجِبُ أَنْ يُرَاعَى كُلُّ شَيْءٍ فِي مَحَلِّهِ، كَذَا فِي التَّتَارْخَانِيَّة نَاقِلًا عَنْ الْيَتِيمَةِ. إذَا قَالَ: "سَمِعَ اللَّهُ لِمَنْ حَمِدَهْ" يَقُولُ الْهَاءَ بِالْجَزْمِ وَلَايُبَيِّنُ الْحَرَكَةَ فِي الْهَاءِ، كَذَا فِي التَّتَارْخَانِيَّة نَاقِلًا عَنْ الْحُجَّةِ". (الْفَصْلُ الثَّالِثُ فِي سُنَنِ الصَّلَاةِ وَآدَابِهَا وَكَيْفِيَّتِهَا، ١ / ٧٥ - ٧٦، ط: دار الفكر)  فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144107200341

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے