بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

11 ربیع الثانی 1441ھ- 09 دسمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

روزے کی حالت میں ناک میں مرہم لگانے کا حکم


سوال

کیا ناک کے ابتدائی اندرونی حصے میں مرہم لگانے سے روزے پر اثر پڑتا ہے؟

جواب

اگر ناک کے بالکل ابتدائی اندرونی حصے میں کوئی ایسا مرہم لگایا جائے جس مرہم کے ذرات ناک کے راستے سے حلق تک نہ پہنچیں تو ایسا مرہم ناک کے ابتدائی اندرونی حصہ میں لگانے سے روزے پر کوئی فرق نہیں پڑے گا، لیکن اگرمرہم کے ذرات / اجزاء ناک کے راستے سے حلق تک پہنچ جائیں تو اس سے روزہ ٹوٹ جائے گا۔ بہرحال بلا ضرورتِ شدیدہ دونوں صورتوں میں احتیاط کا تقاضا یہ ہے کہ روزے کی حالت ناک میں مرہم نہ لگایا جائے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008201799

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے