بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

11 شعبان 1441ھ- 05 اپریل 2020 ء

دارالافتاء

 

دوائیوں کی وجہ سے اترنے والے دودھ سے رضاعت کا حکم


سوال

زینب نے ایک بچی گود لی صرف اس  لیے کہ اس کے بیٹے  کی محرم بنے، زینب کا بیٹا 6 سال کا ہے زینب نے طاقت والی دوائیاں استعمال جس کی بنا  پہ  چند قطرے اتر آئے، تو کیا حکم ہوگا کہ بچی ان کے بیٹے کی محرم بن جائے گی؟  واضح رہے کہ بچی کا زینب کے شوہر سے محرم کا رشتہ ہے۔

جواب

مدتِ رضاعت  میں اگر بچی نے مسماۃ زینب  کا دودھ پی لیا ہے  اگرچہ  چند  قطرے  ہی  تھے تو  اس سے رضاعت ثابت ہوگئی ہے،  اب وہ بچی مسماۃ زینب  کی رضاعی بیٹی ہے اور اس کا بیٹا مذکورہ بچی کا رضاعی بھائی بن چکا ہے۔

الفتاوى الهندية (7 / 485):
"قَلِيلُ الرَّضَاعِ وَكَثِيرُهُ إذَا حَصَلَ فِي مُدَّةِ الرَّضَاعِ تَعَلَّقَ بِهِ التَّحْرِيمُ، كَذَا فِي الْهِدَايَةِ .قَالَ فِي الْيَنَابِيعِ: وَالْقَلِيلُ مُفَسَّرٌ بِمَا يُعْلَمُ أَنَّهُ وَصَلَ إلَى الْجَوْفِ، كَذَا فِي السِّرَاجِ الْوَهَّاجِ". 
فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144012201820

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے