بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 26 فروری 2020 ء

دارالافتاء

 

حضرت بلال رضی اللہ عنہ کے اذان نہ دینے کی وجہ سے سورج کا رکنا


سوال

کیا یہ درست ہے کہ حضرت بلال رضی اللہ عنہ نے فجر کی اذان نہیں دی تو سورج طلوع نہیں ہوا؟  اس حوالے سے بہت سے لوگ اختلاف کر رہے ہیں اور اس واقعے کو غلط کہہ رہے ہیں، جب کہ ہم مستقل سنتے اور پڑھتے آئے ہیں کہ یہ واقعہ اسی طرح رونما ہوا تھا۔ آپ سے التماس ہے کہ اس سلسلے میں اسلامی تاریخ کی روشنی میں راہ نمائی فرمائیں!

جواب

یہ واقعہ درست نہیں ہے، حضرت بلال رضی اللہ عنہ کے بہت سے فضائل ہیں، انہیں کو ذکر کرنا چاہیے، یہ واقعہ احادیثِ مبارکہ میں موجود نہیں ہے، اسے ذکر کرنا درست نہیں ہے۔ فقط واللہ اعلم 


فتوی نمبر : 144104200409

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے