بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

10 شعبان 1441ھ- 04 اپریل 2020 ء

دارالافتاء

 

”حرمہ“ نام رکھنے کا حکم


سوال

         بچی کا نام ”حرمہ“ رکھنا جائز ہے؟

جواب

'' حُرْمَه '' کے عربی زبان میں مختلف معانی آتے ہیں، جن میں سے چند یہ ہیں : (1)واجب الرعایت ، عہد و ذمہ داری جس کو پامال کرنا درست نہ ہو ۔ (2) عورت (3) بیوی (4)  تقدیس ، عظمت و عزت (5) دبدبہ ، رعب ۔ ان معانی کے پیش نظر لڑکی کا نام ”حرمہ “ رکھا جاسکتا ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143908200437

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے