بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

9 شعبان 1441ھ- 03 اپریل 2020 ء

دارالافتاء

 

حدیث شریف داووا مرضاکم بالصدقہ کا حوالہ


سوال

'دَاوُوْا مَرْضَآکُمْ بِالصَّدَقَۃِصدقہ کے ذریعہ اپنے مریضوں کا علاج کرو'۔

 مندرجہ بالا حدیث صحیح ہے؟ اس کا حوالہ کیا ہے؟

جواب

ذکرکردہ حدیث 'المعجم الکبیرللطبرانی '، شعب الایمان للبیہقی' اور'مراسیل ابی داؤد'میں موجود ہے۔البتہ اس حدیث کے بعض راویوں پر محدثین نے کلام کیاہے۔تاہم چوں کہ حدیث موضوع نہیں اور صدقہ کے ذریعہ سے بلاؤں کاٹلنامختلف احادیث میں منقول ہے، جیساکہ ترمذی شریف کی روایت میں ہے:

'عن أنس بن مالك : قال قال رسول الله صلى الله عليه و سلم: إن الصدقة لتطفئ غضب الرب وتدفع عن ميته السوء 

کہ صدقہ اللہ کے غضب کو ٹھنڈا کرتاہے اور بری موت سے بچاتاہے۔

لہذا مذکورہ حدیث پر عمل کرنایعنی امراض سے تحفظ کے لیے یاامراض کی دوری کے لیے صدقہ دینادرست ہے۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143906200022

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے