بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

8 شوال 1441ھ- 31 مئی 2020 ء

دارالافتاء

 

جگر عطیہ کرنا کیسا ہے؟


سوال

زندہ انسان کا اپنا جگر کسی دوسرے کو عطیہ کرنا کیسا ہے؟؟ کیونکہ میں نے سنا ہےکہ جدید تحقیق کے مطابق جگر دوسرا پیدا هوجاتا ہے۔

جواب

ایک انسان کا دوسرے کواپنا جگر یا کوئی دوسراعضو عطیہ کرنا جائز نہیں ہے، جگر کے دوبارہ پیدا ہوجانے کی علت کے سبب اس کے عطیہ کرنے کا جواز پیدا نہیں ہوگا۔


فتوی نمبر : 143707200009

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے