بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

16 شعبان 1441ھ- 10 اپریل 2020 ء

دارالافتاء

 

بیوی کی زکاۃ ادا کرنا شوہر کے ذمہ واجب نہیں


سوال

بیوی کے پاس 6 تولے سے زائد سونا ہو اور اس کے شوہر کی مالی حالت بہتر نہ ہو بلکہ مقروض بھی ہو، اور اس کی بیوی مذکورہ سونے پر زکاۃدینے کا اصرار کرے تو کیاشوہر زکاۃ دینے کا پابند ہوگا؟

جواب

اگر بیوی کے پاس  صرف چھے تولہ سوناہے تو  اس پر زکاۃ واجب نہیں ہے، لیکن اگر چھ تولہ سونے کے ساتھ   نقد رقم بھی ہے تو  اس کی زکاۃ  بیوی پر واجب ہے ۔  شوہر بیوی کی زکاۃ کی ادائیگی کا پابند نہیں ہے ۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143808200013

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے