بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

26 رمضان 1442ھ 09 مئی 2021 ء

دارالافتاء

 

بینک کی طرف سے ملنے والے تحائف کا حکم


سوال

حج ایپلی کیشن کے بعد بینک سے جو گفٹ (شتری ) ملتی ہے, کیا اس کا استعمال جائز ہے؟

جواب

بینک  اپنی آمدن سے تحائف (چھتری وغیرہ) دے  تو ان کا استعمال جائز نہیں ہے، البتہ اگر تحقیق سے ثابت ہوجائے کہ تحائف بینک کی آمدن سے نہیں ہیں، کسی کمپنی وغیرہ کی طرف سے بینک کے توسط سے حجاجِ کرام کو دیے جارہے ہیں تو ان کا استعمال ناجائز نہیں ہوگا۔ ان پر اگر بینک کا نام، لوگو وغیرہ کوئی نشان لگاہو تو  یہ قرینہ ہے بینک کی طرف سے ہونے کا، اس صورت میں استعمال نہیں کرنا چاہیے۔  فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144107200431

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں