بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 19 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

بیمہ کمپنی کی پالیسیاں لینا


سوال

 آج کل مختلف بیمہ کمپنی والے مختلف جگہوں پر انویسمنٹ کی ترغیب دیتے ہیں اور کچھ فتوی بھی دکھاتے ہیں میں شریعت کی روشنی میں پوچھنا چاہ رہا تھا کہ یہ پالیسی لینا ٹھیک ہے کہ نہیں ؟

جواب

بیمہ کمپنی کی پالیسیاں جوا اورسودی معاملات  پر مشتمل ہوتی ہیں؛ اس لیے انہیں اختیار کرنا جائز نہیں۔  واضح رہے کہ انشورنس کے متبادل کے طور پر تکافل کے نام سے رائج کمپنیوں کی پالیسی بھی ملک کے جمہور مفتیانِ کرام کی رائے میں شریعت کے مطابق نہیں ہے، لہٰذا اس سے بھی اجتناب کیا جائے۔ فقط واللہ اعلم  


فتوی نمبر : 144007200419

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے