بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 17 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

بچوں کی تربیت نہ ہوسکنے کے خوف سے بچوں کے درمیان وقفہ کرنا


سوال

کیا بچوں کی تربیت نہ کرسکنے کے خوف سے بچوں کے درمیان وقفہ کرنا جائز ہے؟ اگر ہاں تو کیا اس کے لیے کوئی بھی طریقہ اپنایا جاسکتا ہے؟

جواب

بچوں کی تربیت کرنا والدین کی ذمہ داری ہے، اس نیت سے بچوں کے درمیان وقفہ کرنا کہ پہلا بچہ ذرا بڑا ہو جائےتاکہ دونوں کی صحت و تربیت مناسب ہو،  تو باہمی مشاورت سے ایسا کرنے  کی شرعاً اجازت ہے۔ لیکن اگر یہ وقفہ اس نیت سے ہو کہ دوسرا بچہ پیدا ہوگا تو اس کے خرچ اور کھانے کا انتظام کہاں سے ہوگا ،تو اس نیت سےوقفہ کرنا  جائز نہیں۔

باقی وقفہ کرنے کے لیے شرعی حدود میں رہ کر کوئی عارضی ذریعہ اختیار کیا جائے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143908200927

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے