بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 17 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

ایک ماہ کے حمل کو ضائع کرانا


سوال

میری ایک کزن ہے،  15 دن پہلے اس کے شوہر نے تین طلاق دیدی، ایک ماہ کا حمل ہے، کیا اس حمل کو ضائع کرسکتی ہے؟ شرعی راہ نمائی فرمائیں!

جواب

کراہت ہوگی، البتہ اگر مطلقہ کی عمر چھوٹی ہو اوراولاد کی وجہ سے دوسری جگہ مناسب رشتہ نہ مل سکتا ہو تو پھر گنجائش ہوگی۔ 

کذا فی الشامیۃ : ونقل عن الذخیرۃ لو ارادت الالقاء  قبل مضی زمن ینفخ فیہ الروح ھل یباح لھا ذالک ام لا؟  اختلفوا فیہ ، وکان الفقیہ علی بن موسی یقول انہ یکرہ ، فان الماء بعد ما وقع فی الرحم مالہ الحیاۃ فیکون لہ حکم الحیاۃ کما فی بیضۃ صید الحرم، ونحوہ  فی الظہیریۃ قال ابن وھبان : فاباحۃ الاسقاط محمولۃ علی حالۃ العذر الخ ( ج: ۳، ص: ۱۷۶، ط: سعید ) فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143811200034

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے