بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 20 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

ایک دو تین جا تو مجھ پر مطلقہ ہے، کہنے سے کتنی طلاق واقع ہوئیں؟


سوال

" ایک دو تین جا تو مجھ پر مطلقہ ہے" یہ الفاظ اپنی بیوی سے دو مرتبہ بولے،اب کیا حکم ہے؟

جواب

ایک دو تین یہ جملہ لغو شمار ہوگا، جا تو مجھ پر مطلقہ ہے؛  اس جملہ سے طلاقِ رجعی واقع ہوجائے گی،پس  صورتِ مسئولہ میں شوہر نے مذکورہ جملہ چوں کہ دو مرتبہ کہا ہے؛ لہذا اس سے دو طلاق رجعی واقع ہوگئی ہیں، دوران عدت شوہر کو رجوع کا حق حاصل ہوگا، البتہ عدت کے دوران رجوع نہ کرنے کی صورت میں عدت کی تکمیل کے ساتھ ہی مذکورہ شخص کی بیوی اس کے نکاح سے آزاد ہوجائے گی، تاہم باہمی رضامندی سے نئے مہر کے ساتھ  تجدید نکاح جائز ہوگا، بہر صورت آئندہ مذکورہ شخص کو صرف ایک طلاق کا حق حاصل ہوگا۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008201268

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے