بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

8 شعبان 1441ھ- 02 اپریل 2020 ء

دارالافتاء

 

ایسا پلاٹ جس میں تعمیر اور فروخت دونوں کی نیت ہو میں زکاۃ کی حکم


سوال

انوسٹمنٹ کا پلاٹ لے کر چھوڑ دیا جائے اور نیت یہ ہے کہ اپنی کنسٹرکشن کریں گے یا اچھا پروفٹ ملا تو فروخت کردیں گے ،دونوں نیتیں ہیں، اس طرح کے پلاٹ پر زکاۃ دینی ہوگی؟

جواب

اس طرح کا  پلاٹ جس میں خریدتے وقت کوئی ایک  جہت متعین نہ ہو، اس میں زکاۃ واجب نہیں ہوتی ۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143810200016

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے