بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 27 فروری 2020 ء

دارالافتاء

 

امانت کی رقم کی زکاۃ مالک پر لازم ہے


سوال

میرے پاس بطورِ امانت 3 لاکھ روپے ہیں، جس کی امانت ہے وہ بیرونِ ملک ہے اور اس نے اختیار بھی دیا ہے کہ ضرورت پڑنے پر میں یہ رقم استعمال کر سکتا ہوں ۔نیز یہ رقم اس کو عرصہ دو سال بعد درکار ہو گی اس رقم پر زکاۃ کا کیا حکم ہے ؟

جواب

امانت رکھوانے والے کی اجازت سے امانت کی رقم کا استعمال آپ کے لیے جائز ہے۔البتہ اس رقم کے مالک چوں کہ رکھوانے والے شخص ہیں؛ اس لیے اس رقم کی زکاۃ مالک پر لازم ہے  آپ پر نہیں۔فقط واللہ علم


فتوی نمبر : 143908200248

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے