بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

14 شعبان 1441ھ- 08 اپریل 2020 ء

دارالافتاء

 

ارفعہ نام رکھنے کا حکم


سوال

’’ارفعہ‘‘  نام کیسا ہے؟ رکھنا چاہے یا نہیں؟

جواب

’’ارفعہ‘‘  کا مادہ ”رفع“ ہے، اس کے معنی بلند  ہونے کے ہیں، اس سے ”اَرْفَع“ (مذکر) استعمال ہوتا ہے،  جس کے معنی ’’بلند تر‘‘ کے ہیں،  لڑکی کانام اسی مادہ سے رکھنا ہو تو  ”رَافِعَهْ“ رکھ لیا جائے۔ ’’ارفعہ‘‘  عربی لغت کے اعتبار سے مکمل جملہ ہے، یہ نام رکھنا درست نہیں ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144105200185

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے