بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 22 ستمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

روزہ کی حالت میں سرمہ لگانا اور جسم پر تیل یا بام لگانا


سوال

کیا روزے  کی حالت میں سر میں تیل اور آنکھوں میں سرمہ یا کاجل لگاسکتے ہیں؟ روزے کی حالت میں جسم میں درد ہونے کی صورت میں تیل یا کسی بام سے مساج کرسکتے ہیں؟

جواب

روزے کی حالت میں سر میں تیل اور آنکھوں میں سرمہ یا کاجل لگانے سے روزہ نہیں ٹوٹتا، اسی طرح بحالتِ روزہ جسم پر تیل یا بام سے مساج کرنے سے بھی روزہ نہیں ٹوٹتا۔

''(أو أدهن أو اكتحل أو احتجم) وإن وجد طعمه في حلقه''۔

و في الرد : ''(قوله: وإن وجد طعمه في حلقه) أي طعم الكحل أو الدهن،كما في السراج، وكذا لو بزق فوجد لونه في الأصح، بحر، قال في النهر:لأن الموجود في حلقه أثر داخل من المسام الذي هو خلل البدن، والمفطر إنما هو الداخل من المنافذ للاتفاق على أن من اغتسل في ماء فوجد برده في باطنه أنه لا يفطر، وإنما كره الإمام الدخول في الماء والتلفف بالثوب المبلول؛ لما فيه من إظهار الضجر في إقامة العبادة لا؛ لأنه مفطر. اهـ. وسيأتي أن كلاً من الكحل والدهن غير مكروه، وكذا في الحجامة إلا إذا كانت تضعفه عن الصوم''.(رد المحتار 2/367) فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909200378

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے