بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

29 جمادى الاخرى 1441ھ- 24 فروری 2020 ء

دارالافتاء

 

تراویح کی قضا


سوال

سفر میں تراویح کا ٹائم نکل جا ئے تو تراویح قضا کیسے ہو گی؟

جواب

تراویح کا وقت عشاء کی نماز کے بعد سے لے کر طلوعِ فجر تک ہے، لہذا اگر کوئی شخص وقت کے اندر تراویح نہ پڑھ سکا تو اس پرتراویح کی قضا لازم نہیں۔

واضح رہے کہ دوران سفر اگر تراویح پڑھنے کی سہولت نہ ہو تو اسے چھوڑنے کی گنجائش ہے۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143908200961

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے